ٹیگ کے محفوظات: پوشوں

جنونِ کوچَہِ جاناں ہے سَر فروشوں میں

ہے شور اہلِ محبّت کے عیب کوشوں میں
جنونِ کوچَہِ جاناں ہے سَر فروشوں میں
عجب نہیں ہے دیارِ خرَد کی ویرانی
یہ دَورِ رقصِ جنوں ہے تماش بینوں میں
نظر ہے حال پَہ کوئی نہ فکرِ آیندہ
بقا کا ذِکر بہت ہے فنا بدوشوں میں
کبھی رہے نہ خریدارِ عالَمِ فانی
ہمیَں شمار نہ کیجے سکوں فروشوں میں
وہ حُبِّ جاہ ہو یا شوقِ خُود نُمائی ہو
تمام رنگ مِلیں گے سفید پوشوں میں
یہ کون مطلعِ انوار بَن کے روشَن ہے
حواس و ہوش کے ضامنؔ تمام گوشوں میں
ضامن جعفری