ٹیگ کے محفوظات: نیا سویرا

نیا سویرا

جہانِ نو کے خداؤ نئی کرن پھوٹی

پرانے دیپ بجھاؤ نئی کرن پھوٹی

ہوا میں رُک نہ سکیں گی روایتی شمعیں

اب آفتاب جلاؤ نئی کرن پھوٹی

وہ پَو پھٹی وہ اُجالے کے نرم تیر چلے

وہ شب میں پڑگئے گھاؤ نئی کرن پھوٹی

سیاہیوں کا کفن چاک ہو گیا دیکھو

طلوعِ صبح مناؤ نئی کرن پھوٹی

شفق کے کھیت میں وہ روشنی کے پھول کِھلے

خزاں کو آگ لگاؤ نئی کرن پھوٹی

افق پہ چھا گئے زرکار و سیم گوں ڈورے

دلوں کے چاک ملاؤ نئی کرن پھوٹی

شفق بدوش رو پہلی سحر کی خوش رنگی

نظر نظر میں رچاؤ نئی کرن پھوٹی

پگھل رہا ہے دھواں دھار سطوتوں کا غرور

دہک اٹھا ہے الاؤ نئی کرن پھوٹی

شکار ہو نہ سکے گی جنوں کی زرتابی

خرد کے جال بچھاؤ نئی کرن پھوٹی

وہی جو تیرگیِ شب میں ظلم ڈھاتے تھے

اب ان کو پیار سکھاؤ نئی کرن پھوٹی

مرا پسینا جبینِ سَحر کا جُھومر ہے

مرا لہو نہ بہاؤ نئی کرن پھوٹی

جہاں سے حرص و ہَوس کا غُبار چَھٹ جائے

وفا کی دھوم مچاؤ نئی کرن پھوٹی

عیُوب پوش سیاہی کے سُودخوروں میں

متاعِ علم لُٹاؤ نئی کرن پھوٹی

ہر ایک فرد ہر انساں کا احترام کرے

اک ایسی رِیت بناؤ نئی کرن پھوٹی

نئی حیات جنم دن منا رہی ہے آج

نئے اصول بناؤ نئی کرن پھوٹی

شکیب جلالی