ٹیگ کے محفوظات: رت جگے کے اداس منظر میں

رت جگے کے اداس منظر میں

رت جگے کے اداس منظر میں

اُس کی خوشبو ہے اس کی آہٹ ہے

اُس کے انفاس کی تھکاوٹ ہے

خواب کے قفل کھولتی ہوں میں

اس کی آواز اوڑھتی ہوں میں

کیسی بے خود ہیں ساعتیں توبہ!

اُس کے لہجے کی لکنتیں توبہ!!

میری بالی سے کھیلتا ہے وہ

میرا تعویز کھینچتا ہے وہ

بے ادب شوق کے اجالے میں

دور تک بس میرے تصور میں

اُس کا سایہ ہے، اس کی باتیں ہیں

اُس کی دھڑکن ہے، اُس کی سانسیں ہیں

کیوں مگر خواب کے دھندلکے میں

اُس کی صورت نظر نہیں آتی

میری بے تاب دھڑکنیں اس کو

چھونا چاہیں تو چھو نہیں پاتیں ۔۔۔

نینا عادل