ٹیگ کے محفوظات: دل کو آنکھوں کا اعتبار آیا

دل کو آنکھوں کا اعتبار آیا

(مصرعِ طرح:’’ سرِ منصور ہی کا بار آیا‘‘ ۔ میر تقی میر)ؔ
چند لمحے کہیِں گزار آیا
دل پر اک بوجھ تھا اُتار آیا
تیرا آنکھوں میں دل سجا لینا
ذہن میں میرے بار بار آیا
دیکھ کر اُس کو رو بہ رو ضامنؔ
دل کو آنکھوں کا اعتبار آیا
ضامن جعفری