پیغام۔ ۱

اسے کہنا۔۔۔۔

کہ پھر سے گلستاں میں

بہار آنے لگی ہے۔۔۔۔۔

اسے کہنا۔۔۔۔۔

کہ برسوں سے اِس اُجڑے آشیاں میں

صبا نے جھانک کر دیکھا،

چٹکنے لگ پڑے غنچے

اسے کہنا۔۔

کہ پھر سے راہ پیما ہیں نگاہیں

اور اِک اقرار کو ترسی ہوئی آنکھیں

تصور میں اسی کو۔۔۔

بس اسی کو دیکھتی ہیں

یاور ماجد

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s