آج کا نقاد

یہ کیا ہے؟

کوئی سبزی ہے؟ خود کو کہتی ہے پھل؟

کیا کہا؟۔۔۔ سیب ہے؟

آؤ اس کو ذرا اپنی تنقید کی بھٹی میں ڈال کر دیکھ لیں

ذرا دیکھتے ہیں یہ پھل ہے یا سبزی یا آلو کہ پیاز

بڑے رنگ ہیں واہ۔۔

لیکن ہر اک مستند پھل تو پیلا ہی دیکھا ہے

مثلاً دُسہری، یا چونسہ، یا سندھڑی

یہ سبزی، یا بُوٹی یا جو شے بھی ہے، گول ہے۔۔۔

مستند پھل مگر بیضوی ہوتے ہیں

کیا دُسہری یا سندھڑی کبھی گول دیکھے گئے؟

کاٹ کر دیکھتے ہیں کہ اندر ہے کیا

اس میں تو کوئی گٹھلی نہیں، اس میں تو ڈھیر سے بیج ہیں

اور بیجوں پہ داڑھی نہیں

جیسے چونسہ، دُسہری یا سندھڑی کی گٹھلی پہ نورانی داڑھی بھلی لگتی ہے

اس کے بیجوں میں یہ اک کمی لگتی ہے

اب بھی یہ سیب کہتا ہے پھل ہے؟ ؟

سنو بھائی! سچ پوچھو تو میری تنقید میں اس کو پھل کہنا جائز نہیں۔

یہ ابھی ارتقا کے مراحل میں ہے

۔۔۔۔۔ گو کہ مستقبل اس کا خوش آئند ہے

یاور ماجد

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s