ہر بے وفا سے عہدِ وفا کر چکے ہیں ہَم

ہیں مُطمئن کہ ترکِ اَنا کر چُکے ہیں ہَم
ہر بے وفا سے عہدِ وفا کر چکے ہیں ہَم
اَفشا ہے ہَم پہ رازِ صَنَم خانۂ حَیات
ہَر بُت کو ایک بار خُدا کَر چُکے ہَیں ہَم
اَب کوئی شَرطِ لُطفِ فَراواں نَہیِں قبول
حقِّ نَمَک کَبھی کا اَدا کَر چُکے ہَیں ہَم
تُو جانے اَور جانے تِری رحمتِ تَمام
اَب تَو دَراز دَستِ دُعا کَر چُکے ہَیں ہَم
اَربابِ فِکر ڈھُونڈ رَہے ہَیں دَوائے دِل
ہَم ہَنس رَہے ہَیں ، زَخم ہَرا کَر چُکے ہَیں ہَم
ضامنؔ! نگاہِ ناز کو نظروں سے دو پیام
ہوش و حواس تجھ پہ فدا کر چکے ہیں ہم
ضامن جعفری

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s