میں وہ میں ہی نہ رَہا پِھر اَثَرِ عِشق کے بَعد

سارے دَر کُھلتے گئے، ایک دَرِ عِشق کے بَعد
میں وہ میں ہی نہ رَہا پِھر اَثَرِ عِشق کے بَعد
ایک قَطرہ ہُوا کَرتا تھا، سَمَندَر ہُوں میں
سَفَرِ عِشق سے پہلے سَفَرِ عِشق کے بَعد
قَدر کرنا ہو تَو کر لو کہ یہی آخری ہے
کوئی آئے گا نہ اِس دَر بَدَرِ عِشق کے بَعد
حِدَّتِ رُوح نے پایا نہ کبھی سایہ فِگَن
کوئی پیڑ اِتنا گَھنا پِھر شَجَرِ عِشق کے بَعد
تُم یہ سَمجھوگے اَبھی نُقطَہِ آغاز پہ ہُوں
مُجھ کو دیکھو کبھی آ کر سَفَرِ عِشق کے بَعد
ہَر قَدَم لَگتا تھا ضامنؔ یہی مَنزِل ہے مِری
رہگُزَر ڈُھونڈتا کیا رہگُزَرِ عِشق کے بَعد
ضامن جعفری

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s