لوگ کہتے ہیں کچھ ہُوا ہی نہیں

آدمی آدمی رہا ہی نہیں
لوگ کہتے ہیں کچھ ہُوا ہی نہیں
وہ جو ہوتا ہے سب کو دنیا سے
وہ تعلّق تَو مجھ کو تھا ہی نہیں
سب ہی بے دست و پا سے لگتے ہیں
کوئی گِرتَوں کو تھامتا ہی نہیں
سَو سوالوں کا اِک جواب یہ ہے
مجھ سے پوچھا گچھا گیا ہی نہیں
میں کہ واقف ہُوں ساری دُنیا سے
آپ اپنے کو جانتا ہی نہیں
جب بھی آیا وہ مجھ سے ملنے کو
میں وہ کمبخت! گھر پہ تھا ہی نہیں
دولتِ دل تَو بانٹ دی ضامنؔ
اب مرے پاس کچھ رَہا ہی نہیں
ضامن جعفری

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s