غزہ

مَوت کی نیند سے بچّوں کو جگایا جائے
عید کا چاند انہیَں بھی تَو دِکھایا جائے
کوئی اندھوں کو دِکھائے تَو یہ سَیلابِ لہو
شور ان لہروں کا بَہروں کو سُنایا جائے
جب تلک غَزہ میں یہ رَقصِ اَجَل خَتم نہ ہو
عید کا جَشنِ طَرَب خاک مَنایا جائے
دَستِ صہیون ہے دَر پَردۂ خدّامِ حَرَم
وَطَنِ شافعِ محشر کو چھُڑایا جائے
دولتِ زیرِ زمیں پر جو ہیں ظالم قابض
ضامنؔ اَب زیرِ زمیں ان کو بَسایا جائے
ضامن جعفری

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s