فوجی بینڈ

اے ارضِ پاک تو ہے دارالاماں ہمارا

دائم ہے تیرے دم سے نام و نشاں ہمارا

تو پاک سر زمیں ہے تو منزلِ یقیں ہے

پرچم کا تیرے سایا ہے سائباں ہمارا

دشمن نہ چھو سکیں گے اب تیری سرحدوں کو

بیدار ہو چکا ہے اب کارواں ہمارا

تاروں کی سلطنت میں اُڑتے ہیں اپنے شاہیں

حیرت سے دیکھتا ہے منہ آسماں ہمارا

پربت کی چوٹیوں پر چمکے علم ہمارے

گہرے سمندروں میں ہے آشیاں ہمارا

ہر شاخ اِس چمن کی شمشیرِ حیدری ہے

حملہ نہ سہ سکے گی بادِ خزاں ہمارا

روکے نہ رُک سکے گی تیغِ جہاد اپنی

تھامے نہ تھم سکے گا سیلِ رواں ہمارا

سینچا ہے خونِ دل سے اِن کیاریوں کو ہم نے

تازہ رہے گا ہر دَم یہ گلستاں ہمارا

(پیشکش سلور پولیس لاہور ۔ ۱۴ اکتوبر ۱۹۶۵ ۔ آواز۔ سلیم رضا)

ناصر کاظمی

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s