صدائے کشمیر

صدائے کشمیر آ رہی ہے ، ہماری منزل قریب تر ہے

یہ عدل و انصاف کی گھڑی ہے، ستم کی میعاد مختصر ہے

لہو شہیدوں کا رنگ لایا

نئی سحر کی اُمنگ لایا

غرور کا اَبر چھٹ رہا ہے

رُخِ حوادث پلٹ رہا ہے

یہ پیڑ اب تیر بن گئے ہیں

چنار شمشیر بن گئے ہیں

خدا کا قہر و عذاب آیا

عدو کا روزِ حساب آیا

گھروں سے نکلے ہیں اہلِ ایماں

کسی کے بس کا نہیں یہ طوفاں

گزر کے چشموں سے، بحر و بر سے

ہر ایک گھر تک پہنچ گئی ہے

سری نگر تک پہنچ گئی ہے

یہ تیغ تھامے نہ تھم سکے گی

عدو کی محفل نہ جم سکے گی

علم ہمارا نہ جھک سکے گا

یہ سیل روکے نہ رُک سکے گا

(۲۴ اکتوبر ۱۹۶۵ ۔ آزاد کشمیر ریڈیو)

ناصر کاظمی

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s