دل کی دُنیا میں ہے روشنی آپؐ سے

دل کی دُنیا میں ہے روشنی آپؐ سے

ہم نے پائی نئی زندگی آپؐ سے

کیوں نہ نازاں ہوں اپنے مقدر پہ ہم

ہم کو ایماں کی دولت ملی آپؐ سے

کل بھی معمور تھا آپ کے نور سے

ہے منوّر جہاں آج بھی آپؐ سے

دُشمنوں پر بھی در رحمتوں کا کھلا

راہ و رسمِ محبت چلی آپؐ سے

دل کا غنچہ چٹکتا ہے صلِ علیٰ

اپنے گلشن میں ہے تازگی آپؐ سے

سب جہانوں کی رحمت کہا آپؐ کو

کتنا خوش ہے خدا ، یانبی آپؐ سے

ختم ہے آپ پر شانِ پیغمبری

یہ روایت مکمل ہوئی آپؐ سے

(۱۱ فروری ۱۹۷۱)

ناصر کاظمی

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s