دو کشتیوں کے سوار

تم نے کہا:

’’تم دوہری شہریت والے

دو کشتیوں کے سوار ہو،

ایک پاؤں ایک میں

دوسرا دوسری میں

گرو گے۔‘‘

سنو، تم بھی دو کشتیوں کے سوار ہو

فرق؟

تم خود تو اپنی کشتی میں سوار ہو

لیکن تمہارے اثاثے، کاروبار، اولاد

ہماری کشتی میں ،

کیونکہ تم سمجھتے ہو

یہ زیادہ محفوظ ہے۔

اِدھر ہمارے جسم ہماری کشتی میں ہیں

لیکن ہمارا دل تمہاری کشتی میں ۔

اس کی حفاظت کرنا۔

باصر کاظمی

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s