اے مرے شبد

اے مرے شبد، مرے بھید، مہادھن میرے

رات میں خوشبو تری! نیند میں بوسہ تیرا ۔۔۔

ٹھنڈ میں آگ تری تاپوں، کھِلوں

جی اٹّھوں!

اپنے آنسو ترے ہاتھوں کے کٹورے میں رکھوں

دیر تک تجھ سے لپٹ کر یونہی روتی جاؤں

اے مرے شبد! ترے معنی کی ست رنگ گرہ

کبھی سلجھاؤں

کبھی انگلی میں الجھا بیٹھوں

گم رہوں تجھ میں کہیں، تجھ میں کہیں کھو جاؤں

اے مرے شبد! مرے عشق، مرے افسانے

شام گل رنگ کرے، خواب کو دو چند کرے

تیری بارش میں نکھرتا ہوا سبزہ میرا

مانگ آشاؤں کی بھرتی ہوئی اس دنیا میں

اور کوئی بھی نہیں، کوئی نہیں

تو میرا!! ۔

نینا عادل

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s