شاعر کا ماضی

یہ شب ہائے گزشتہ کے جنوں انگیز افسانے

یہ آوارہ پریشاں زمزمے سازِ جوانی کے

یہ میری عشرتِ برباد کی بے باک تصویریں

یہ آئینے مرے شوریدہ آغازِ جوانی کے!

یہ اک رنگیں غزل لیلیٰ کی زلفوں کی ستائش میں

یہ تعریفیں سلیمیٰ کی فسوں پرور نگاہوں کی

یہ جذبے سے بھرا اظہار شیریں کی محبت کا

یہ ایک گزری کہانی آنسوؤں کی اور آہوں کی

کہاں ہو او مری لیلیِٰ___کہاں ہو او مری شیریں؟

سلیمیٰ تم بھی تھک کر رہ گئیں راہِ محبت میں؟

مرے عہدِ گزشتہ پر سکوتِ مرگ طاری ہے

مری شمعو، بجھی جاتی ہو کس طوفانِ ظلمت میں؟

مرے شعرو، مرے فردوسِ گم گشتہ کے نظّارو!

ابھی تک ہے دیارِ روح میں ایک روشنی تم سے

کہ میں حسن و محبت پر لٹانے کے لیے تم کو

اڑا لایا تھا جا کر محفلِ ماہتاب و انجم سے!

ن م راشد