گزرے ہے آبلہ پا ابرِ گہربار ہنوز

دیوانِ غالب ۔ غزل نمبر 126
وسعتِ سعیِ کرم دیکھ کہ سر تا سرِ خاک
گزرے ہے آبلہ پا ابرِ گہربار ہنوز
یک قلم کاغذِ آتش زدہ ہے صفحۂ دشت
نقشِ پا میں ہے تپِ گرمئ رفتار ہنوز
مرزا اسد اللہ خان غالب