کہ رہے چشمِ خریدار پہ احساں میرا

دیوانِ غالب ۔ غزل نمبر 65
سرمۂ مفتِ نظر ہوں مری قیمت@ یہ ہے
کہ رہے چشمِ خریدار پہ احساں میرا
رخصتِ نالہ مجھے دے کہ مبادا ظالم
تیرے چہرے سے ہو ظاہر غمِ پنہاں میرا
@ نسخۂ آگرہ، منشی شیو نارائن، 1863ء میں’مری قسمت‘
مرزا اسد اللہ خان غالب