جس کی بہار یہ ہو پھر اس کی خزاں نہ پوچھ

دیوانِ غالب ۔ غزل نمبر 186
ہے سبزہ زار ہر در و دیوارِ غم کدہ
جس کی بہار یہ ہو پھر اس کی خزاں نہ پوچھ
ناچار بیکسی کی بھی حسرت اٹھائیے
دشوارئِ رہ و ستمِ ہمرہاں نہ پوچھ
مرزا اسد اللہ خان غالب