ٹک حسن کی طرف ہو کیا کیا جوان مارے

دیوان ششم غزل 1905
اے عشق بے محابا تونے تو جان مارے
ٹک حسن کی طرف ہو کیا کیا جوان مارے
میر تقی میر