یہ جرم ہے تو ایسے گنہگار بہت ہیں

دیوان اول غزل 337
تجھ عشق میں تو مرنے کو تیار بہت ہیں
یہ جرم ہے تو ایسے گنہگار بہت ہیں
اک زخم کو میں ریزئہ الماس سے چیرا
دل پر ابھی جراحت نوکار بہت ہیں
میر تقی میر