ہے سیر مفت میر تجھے پھر جہاں کہاں

دیوان اول غزل 376
کر صرف دید عمر پھرے ہے تو یاں کہاں
ہے سیر مفت میر تجھے پھر جہاں کہاں
میر تقی میر