ہجراں کا غم تھا تہ میں سختی سے جان ٹوٹی

دیوان پنجم غزل 1763
دو چار روز آگے چھاتی گئی تھی کوٹی
ہجراں کا غم تھا تہ میں سختی سے جان ٹوٹی
کلیاں جھڑی ہیں کچی بکھرے ہیں پھول سارے
پائیز نے چمن میں کیا کیا بہار لوٹی
سیر چمن میں کچھ تو جی سے ہوس نکلتی
موسم میں گل کے بلبل افسوس ہے نہ چھوٹی
میر تقی میر