چشم نم دیدہ سے عاشق کی سدا جاری ہے فیض

دیوان اول غزل 242
سال میں ابر بہاری تجھ سے اک باری ہے فیض
چشم نم دیدہ سے عاشق کی سدا جاری ہے فیض
میر تقی میر