میری توبہ کا جان ڈرتا ہے

دیوان اول غزل 628
جوں جوں ساقی تو جام بھرتا ہے
میری توبہ کا جان ڈرتا ہے
سیر کر عاشقوں کی جانبازی
کوئی سسکتا ہے کوئی مرتا ہے
میر ازبسکہ ناتواں ہوں میں
جی مرا سائیں سائیں کرتا ہے
میر تقی میر