ملک دل ان نے صاف لوٹا ہے

دیوان اول غزل 645
کیا کہوں کچھ بھی اس سے چھوٹا ہے
ملک دل ان نے صاف لوٹا ہے
خاک سے میر کیوں نہ یکساں ہوں
مجھ پہ تو آسمان ٹوٹا ہے
میر تقی میر