لوہو ٹپکتا ہے گریباں سے آج

دیوان پنجم غزل 1591
رنگ یہ ہے دیدئہ گریاں سے آج
لوہو ٹپکتا ہے گریباں سے آج
سربہ فلک ہونے کو ہے کس کی خاک
گرد یک اٹھتی ہے بیاباں سے آج
میر تقی میر