شعلۂ آہ دل گرم محبت سے اٹھا

دیوان اول غزل 148
جب کہ تابوت مرا جاے شہادت سے اٹھا
شعلۂ آہ دل گرم محبت سے اٹھا
عمر گذری مجھے بیمار ہی رہتے ہے بجا
دل عزیزوں کا اگر میری عیادت سے اٹھا
میر تقی میر