دانت تمھارے منھ میں کے ہیں اس مغرور نے یوں نہ کہا

دیوان چہارم غزل 1348
پیری میں بے دنداں ہو بیٹھے پر افسوس یہ ہم کو رہا
دانت تمھارے منھ میں کے ہیں اس مغرور نے یوں نہ کہا
کیا روداد کہیں ہم اپنے گریۂ زار محبت کی
رونا سا کوئی روئے ہیں آنکھوں سے اک رود بہا
صبر مرا سا بے جرمی پر ہو نہ سکے گا انساں سے
جور و جفا و ستم جو گذرے سب کچھ میں نے میر سہا
میر تقی میر