بتاں دلوں میں تمھارے خدا کا ڈر بھی ہے

دیوان اول غزل 623
سواے سنگ دلی اور کچھ ہنر بھی ہے
بتاں دلوں میں تمھارے خدا کا ڈر بھی ہے
ترے فراق میں کچھ کھا کے سو رہا ہوں میں
تو کس خیال میں ہے تجھ کو کچھ خبر بھی ہے
میر تقی میر