اٹھے گی مری خاک سے گرد زرد

دیوان سوم غزل 1129
بہت ہے تن درد پرورد زرد
اٹھے گی مری خاک سے گرد زرد
وہ بیمار گو تو نہ جانے مجھے
مرا نامہ لکھنے کو ہو فرد زرد
گذرتی ہے کیا میر دل پر ترے
تو ہوتا ہے ہر لحظہ کچھ زرد زرد
میر تقی میر