اندھیری رات ہے برسات ہے جگنو چمکتے ہیں

دیوان اول غزل 370
تری زلف سیہ کی یاد میں آنسو جھمکتے ہیں
اندھیری رات ہے برسات ہے جگنو چمکتے ہیں
میر تقی میر