اس تشنہ کام نے تو پانی بھی پھر نہ مانگا

دیوان اول غزل 171
دل تاب ٹک بھی لاتا تو کہنے میں کچھ آتا
اس تشنہ کام نے تو پانی بھی پھر نہ مانگا
میر تقی میر