میلی میلی نگاہوں۔۔۔

میلی میلی نگاہوں کی اس بھیڑ کے اندر اور بھی گھس کر دیکھو

قاتل جبڑوں کے جڑتے دندانوں میں شاید اک رخنہ امن کا بھی ہو

اپنے بچاؤ میں اس سے زیادہ کیسے بچے رہو گے

پہلے ہی سے اس دیوار تک ہٹے ہوئے ہو جس کے آگے ۔۔۔ آگ ہے …

ان شعلوں کے چلتے آروں کے اندر ہی کوئی رخنہ امن کا ڈھونڈو

یہ مامن تو۔۔۔ تمہارے دلوں کے کسی گوشے میں جدا نہیں ہے

یہ مامن تو۔۔۔ تمہاری دنیاؤں کے کسی گوشے میں جدا نہیں ہے

اندر بھی، باہر بھی، ایک ہی لشکر ہے جس کی دو ٹکڑیاں

جنگ میں ہیں آپس میں تمہارے دلوں کی سرحد پر، جس کے اندر کی جانب

اتنی دور تک

تم کو پیچھے ہٹنا پڑا ہے۔۔۔

اس جمگھٹ میں اب اک بار تو ہلّا بول کے اپنے دلوں کے اندر کا اک وہ

گوشہ امن کا اپنے واسطے ڈھونڈو

جس پر زندگی کے لشکر کی دو باہم متحارب ٹکڑیوں کا مشترکہ قبضہ رہا ہے

اب تک۔۔۔

مجید امجد

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s