ریڈیو پر اک قیدی …

ریڈیو پر اک قیدی مجھ سے کہتا ہے:

’’میں سلامت ہوں

سنتے ہو۔۔۔ میں زندہ ہوں!‘‘

بھائی ۔۔۔ تو یہ کس سے مخاطب ہے۔۔۔

ہم کب زندہ ہیں؟

اپنی اس چمکیلی زندگی کے لیے تیری مقدس زندگی کا یوں سودا کر کے

کب کے مر بھی چکے ہم

ہم اس قبرستان میں ہیں…

۔۔۔ہم اب اپنی قبروں سے باہر بھی نہیں جھانکتے

ہم کیا جانیں، کس طرح ان پر باہر تیری دکھی پکاروں کے یہ ماتمی دیے روشن ہیں

جن کے اجالوں میں اب دنیا ان لوحوں پہ ہمارے ناموں کو پہچان رہی ہے

مجید امجد

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s