کب کے مٹی۔۔۔

کب کے مٹی کی نیندوں میں سو بھی چکے وہ

میری نیندوں میں اب جاگنے والے

ابھی ابھی تو میری دنیا سوئی ہوئی تھی

ان کی جاگتی آنکھوں کے پہرے میں

ابھی ابھی وہ یہیں کہیں تھے، میرے خوابوں کی عمروں میں

ابھی ابھی اُن کے مٹیالے ابد کی ایک ذرا سی ڈالی گھلی تھی

ان میری آنکھوں میں

اور دکھائی دیے تھے، میری خودبیں بینائی میں

وہ سب ٹھنڈے ٹھنڈے سکھ جو

ان کے دلوں کا انس اور پیار تھے، میرے حق میں

ابھی ابھی تو اس میری بےفہمی کی فہمید میں تھا یہ سب کچھ

اور اب میرے جاگنے میں سب کھو گئے وہ میری نیندوں میں جاگنے والے

مجید امجد

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s