ننھی بھولی۔۔۔

ننھی، بھولی، میلے میلے گالوں والی، بے سدھ سی اک بچی

تیری جانب دیکھ رہی ہے، دیکھ اس کی آنکھیں تیری توجہ کی پیاسی ہیں

اس کی نازک، بے حس ٹھوڑی کو اپنی انگلی کی سنہری پور سے مس تو کر، اور

اس سے اتنا تو پوچھ: ’’اچھی بلو! تو کیوں چپ ہے؟‘‘

اور جب وہ منھ پھیر کے اپنی آنکھیں اپنے ہی چہرے پہ جھکا لے

تو ہی بڑھ کر اس کے ماتھے کو اپنے ہونٹوں سے لگا لے، ہاں ایسے ہی

کیوں، اس جھنجھیلوے نے تجھ سے کہا کیا؟

یہ کیا؟ تیری آنکھیں بھیگ گئیں کیوں؟

اس نے تجھ سے کہا کیا؟

ساتوں آسمانوں کے مالک

اتنے پتلے دل والے مالک! ہم بھی روز اس چہرے کی کتھا سنتے ہیں

ہم تو کڑا کر لیتے ہیں اپنا جی، ایسے موقعوں پر!

مجید امجد

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s