شایرتیرے کرم۔۔۔

شاید تیرے کرم کا اور ہی کچھ منشا ہو

یا اب جو میری حالت ہے، شاید اس میں

امر اک تیری قدرت کا ہو میرے حق میں

لیکن جس تکلیف میں میں ہوں، اس کے ہوتے ہوئے میرا دل تو باور نہیں کرتا

میرا دل تو بس اتنا کچھ مانے، بس اتنا کچھ جانے

تو چاہے تو ہر پانسے کو پلٹ سکتا ہے

عینِ کرم میں

عینِ غضب میں

میں تو اپنے خطروں، اپنی آرزوؤں میں بٹا ہوا اک وہ ذرہ ہوں

جس کے ذرا سے دل کو

ذرا سا ارماں ہے، ان امنوں کا جو تیرے چمنوں میں ہیں

مجید امجد

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s