سب کو برابر کا حصہ۔۔۔

سب کو برابر کا حصہ ملتا ہے اس میعاد سے جس کو

دن کہتے ہیں

سب کے سروں پر

سورج کی تقدیرِ سفر، یکساں لمبی پٹڑی ہے

کسی کے آگے دن کا قد نہیں گھٹتا

کسی کی خاطر دن کی حد نہیں بڑھتی

سب دن اور سب کے دن کٹ جاتے ہیں

سب گزرے دن، سب کے گزرے دن سب اک جیسے ہیں

کھوئی ہوئی اس اک پونجی میں سب سانجھی ہیں

تیرے دن، جو تیری آنکھوں کی ٹھنڈک میں گزرے

میرے دن، جو میرے دل سے نہ گزرے

آج وہ کیا ہیں، کسی خلا کے خانے، خالی خالی خانے

دیکھیں تو سہی، کھولیں تو سہی، ان خانوں کو

مجید امجد

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s