دنیا مرے لیے تھی۔۔۔

دنیا مرے لیے تھی اک بےمصرف مصروفیت

جیسے تھا ہی نہیں میں اس دنیا میں

جیسے موت مرے جی میں جینے آئی ہو

پھر جب ان کے کرم سے ان کا نام مرے ہونٹوں پر آیا

سارا زمانہ، سب تقدیریں، دنیائیں اور چاند ستارے

سب کچھ تھا بس ایک تموّج

لہریں میں جن میں بہتا تھا

لہریں جو میرے جی میں بہتی تھیں

میں تو اس قابل بھی نہیں تھا۔۔۔

یہ سب ان کا کرم تھا

وہ مجھ کو یاد آئے تھے

میں نے ان کو یاد کیا تھا

مجید امجد

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s