خطۂ پاک

خطۂ پاک، ترے نامِ دل آرا کی قسم

کتنے سچے ہیں، سجیلے ہیں، جیالے ہیں وہ دل

جاگتی جیتی، زرہ پوش چٹانوں کے وہ دل

جن کے موّاج لہو کا سیلاب

تیری سرحد کی طرف بڑھتی ہوئی آگ سے ٹکرایا ہے

دیکھتے دیکھتے بارود کی دیوار گری

ہٹ گئے دشمن کے قدم

خندقیں اٹ گئیں شعلوں سے ۔۔۔ مگر ہائے وہ دل

زندہ ۔۔۔ ناقابلِ تسخیر ۔۔۔ عظیم!

ہائے دلوں کی وہ فصیل

جاوداں اور جلیل

جس کے زینوں پہ ظفرمند ارادوں کی سپاہ

جس کے برجوں میں ملائک کے جیوش

جس کا پیکر ہے کہ اک سطرِ جلی

لوحِ ابد پر تاباں

آیۂ عمرِ شہیداں کی طرح!

مجید امجد

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s