راجا پرجا

راجے کا کل آج!

سارا جہاں محتاج

سُکھ، دھن، باج، خراج

گدی، مسند، تاج

تیس برس کا راج

اور پھر اس کے بعد

اک روضہ ویراں

پرجا کا آج نہ کل

شاخ نہ پھول، نہ پھل

بھٹکے دَل کا دَل

بھوکا، پیاسا، شل

لاکھ برس کا پل

اور پھر اس کے بعد

مٹتے گورستاں

راجا پرجا کہاں؟

اک بہتا طوفاں

کوہِ عظیم و گراں

کاہِ سبک ساماں

جھونپڑیاں، ایواں

نغمہ اور فغاں

ہر شے اس میں رواں

ہر شے اس میں نہاں

اور پھر اس کے بعد

ایک وہی طوفاں

مجید امجد

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s