لمحاتِ فانی

بہشتو! چاندنی راتیں تمہاری

ہیں رنگیں، نقرئی، مخمور، پیاری

مگر وہ رات، وہ میخانہ، وہ دور

وہ صہبائے محبت کا چھلکنا

وہ ہونٹوں کی بہم پیوستگی ۔۔۔ اور

دلوں کا ہم نوا ہو کر دھڑکنا

بہشتو! اس شبِ تیرہ پہ صدقے

رُپہلی چاندنی راتیں تمہاری

خدائے وقت! تو ہے جاودانی

ترا ہر سانس روحِ زندگانی

مگر وہ وقت جب تیرہ خلا میں

ستاروں کی نظر گم ہو رہی تھی

اور اس دم میری آغوشِ گنہ میں

قیامت کی جوانی سو رہی تھی

خدائے وقت! اس وقتِ حسیں پر

تصدق تیری عمر جاودانی

مجید امجد

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s