کیہدا جپدی اے ناں

ماجد صدیقی (پنجابی کلام) ۔ غزل نمبر 42
چھلاں مار دی جھناں
کیہدا جپدی اے ناں
کدوں سُکھ نوں کھلیر
کیہڑی ہاسیاں دی تھاں
کتھے ساڈی نمھی ٹور
کتھے ماہی دا گراں
بُسی لگدی اے وا
کنّھوں اکھاں نال لاں
پَیریں سِیکرے دے سُول
سِریں کنڈیاں دی چھاں
دَس ماجداُ کدائیں
کیہدا جپدا سیں ناں
ماجد صدیقی (پنجابی کلام)

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s