مجید امجد 03

فردا

فردا

مجید امجد

  1. فردا
  2. مسلَخ
  3. اس دن اس برفیلی تیز ہوا۔۔۔
  4. دنیا مرے لیے تھی۔۔۔
  5. اپنی آنکھ پہ۔۔۔
  6. ایکسیڈنٹ
  7. کوہِ بلند
  8. ڈر کاہے کا
  9. کمائی
  10. نیلے تالاب
  11. تب میرا دل…
  12. یہ سب دن۔۔۔
  13. اک دن ماں نے کہا
  14. آواز کا امرت
  15. ’’تینوں رب دیاں رکھاں‘‘
  16. پھر جب دوستیوں ۔۔۔
  17. فرد
  18. کبھی کبھی وہ لوگ۔۔۔
  19. موانست
  20. گوشت کی چادر
  21. بےربط
  22. بھائی کوسیجن، اتنی جلدی کیا تھی
  23. مریض کی دعا
  24. وہ بھی اک کیا نام ہے ۔۔۔
  25. دن تو جیسے بھی ہوں۔۔۔
  26. پھولوں کی پلٹن
  27. ایک نظمینہ
  28. لوگ یہ۔۔۔
  29. یہ بھی کوئی بات ہے۔۔۔
  30. بانگِ بقا
  31. ایک صبح۔۔۔ سٹیڈیم ہوٹل میں
  32. دُور، اُدھر۔۔۔
  33. جدھر جدھر بھی۔۔۔
  34. چھٹی کے دن
  35. اُن لوگوں کے اندر ۔۔۔
  36. اے ری چڑیا
  37. بہار کی چڑیا
  38. گہرے بھیدوں والے
  39. مرے ہوئے اس اک ڈھانچے۔۔۔
  40. اے رے من ۔۔۔
  41. میٹنگ
  42. حضرت سید منظور حسین شاہ
  43. زائر
  44. میری عمر اور میرے گھر۔۔۔
  45. بندے
  46. اپنے یہ ارمان۔۔۔
  47. وہ تلوار ابھی۔۔۔
  48. یہ دو پہیے۔۔۔
  49. رکھیا اکھیاں
  50. ورنہ تیرا وجود۔۔۔
  51. اک جیون ہار ڈر سا ہے ترے دل کے لیے
  52. گھور گھٹاؤں
  53. اپنی خوب سی اک خوبی۔۔۔
  54. دیوں کے جلنے سے۔۔۔
  55. ہم تارے، چاند ستارے ہیں
  56. اس برتاؤ میں ہے سب برتا دنیا کی
  57. ننھی بھولی۔۔۔
  58. گستاپو
  59. تم کیا جانو۔۔۔
  60. اور اب یہ اک سنبھلا سنبھلا۔۔۔
  61. مینا
  62. سب کو برابر کا حصہ۔۔۔
  63. کہاں سفینے ۔۔۔
  64. سبھوں نے مل مل لیں۔۔۔
  65. کل کچھ لڑکے…
  66. کوہستانی جانوروں۔۔۔
  67. اپنے لیکھ یہی تھے۔۔۔
  68. اپنے دل میں ڈر۔۔۔
  69. دنوں کے اس آشوب۔۔۔
  70. فصلِ گل
  71. بندے تو یہ کب مانے گا۔۔۔
  72. شایرتیرے کرم۔۔۔
  73. کون ایسا ہو گا۔۔۔
  74. آج تو جاتے جاتے۔۔۔
  75. پہلی سے پہلے
  76. مورتی
  77. اے وہ جس کے لبوں۔۔۔
  78. گدلے پانی۔۔۔
  79. ہر سال ان صبحوں۔۔۔
  80. دامنِ دل
  81. جلسہ
  82. دل کا چھالا
  83. عذاب
  84. موٹر ڈیلرز
  85. اپنے بس میں۔۔۔
  86. نئے لوگو!
  87. دروازے کے پھول
  88. گداگر
  89. اچھے آدمی۔۔۔
  90. حرص
  91. دکھ کی جھپٹ میں ۔۔۔
  92. کب کے مٹی۔۔۔
  93. جاگا ہوں تو۔۔۔
  94. جانے اصلی صورت۔۔۔
  95. ان سب لاکھوں کُروں۔۔۔
  96. کندن
  97. جب اطوار وطیرہ بن جاتے ہیں۔۔۔
  98. طغیان
  99. دنیا تیرے اندر۔۔۔
  100. پچھلے برس ۔۔۔
  101. تو وہ پیاسی توجہ۔۔۔
  102. اور وہ بھی اک کیسی۔۔۔
  103. میرے سفر میں۔۔۔
  104. ننھے کی نوبیں آنکھوں۔۔۔
  105. کہنے کو تو۔۔۔
  106. میں کس جگ مگ میں۔۔۔
  107. جب اک بے حق۔۔۔
  108. اپنی بابت۔۔۔
  109. آنکھیں ہیں جو۔۔۔
  110. اب تو دن تھے
  111. سب کچھ جھکی جھکی۔۔۔
  112. ان کے دلوں کے اندر۔۔۔
  113. بندے جب تو۔۔۔
  114. مصطفیٰ زیدی
  115. سائرن بھی، اذان بھی، ہم بھی
  116. اے قوم
  117. ہم تو سدا۔۔۔
  118. 21 دسمبر 1971
  119. ریڈیو پر اک قیدی …
  120. سب کچھ ریت۔۔۔
  121. چیونٹیوں کے ان قافلوں۔۔۔
  122. 8 جنوری 1972
  123. جنگی قیدی کے نام
  124. میلی میلی نگاہوں۔۔۔
  125. باہر اک دریا۔۔۔
  126. لمبی دھوپ کے۔۔۔
  127. اندر روحوں میں۔۔۔
  128. اس دنیا نے اَب تک۔۔۔
  129. دکھیاری ماؤں نے ۔۔۔
  130. کبھی کبھی تو۔۔۔
  131. ڈھلتے اندھیروں میں۔۔۔
  132. سدا زمانوں کے اندر۔۔۔
  133. اور وہ لوگ۔۔۔
  134. پختہ وصفوں کے بل پر۔۔۔
  135. ساتوں آسمانوں۔۔۔
  136. اپنے آپ کو ۔۔۔
  137. دلوں کی ان فولادی ۔۔۔
  138. زندگیوں کے نازک۔۔۔
  139. تیری نیندیں۔۔۔
  140. ان بے داغ ۔۔۔
  141. جس بھی روح کا۔۔۔
  142. باڑیوں میں مینہ۔۔۔
  143. اس کو علم ہے۔۔۔
  144. اب بھی آنکھیں۔۔۔
  145. اور ان خارزاروں میں۔۔۔
  146. بھولے ہوئے وہ لبھاوے۔۔۔
  147. تو تو سب کچھ
  148. مجھ کو ڈر نہیں۔۔۔
  149. تج دو کہ برت لو، دل تو یہی، چن لو کہ گنوا دو، دن تو یہی
  150. عرشوں تک۔۔۔
  151. کل۔۔۔ جب۔۔۔
  152. دل تو دھڑکتے۔۔۔
  153. اور یہ انساں۔۔۔
  154. اور پھر اک دن۔۔۔
  155. لیکن سچ تو یہ ہے۔۔۔
  156. ہم تو اسی تمہارے سچ۔۔۔
  157. کبھی کبھی تو زندگیاں۔۔۔
  158. سب سینوں میں۔۔۔
  159. برسوں عرصوں میں۔۔۔
  160. آنے والے ساحلوں پر۔۔۔
  161. خوردبینوں پہ جھکی۔۔۔
  162. صدیوں تک۔۔۔
  163. اپنے دکھوں کی مستی میں۔۔۔
  164. کالے بادل۔۔۔
  165. اندر سے اک دُموی لہر۔۔۔
  166. دوسروں کے بھی علم۔۔۔
  167. بستے رہے سب۔۔۔
  168. دو پہیوں کا جستی دستہ۔۔۔
  169. بات کرے بالک سے۔۔۔
  170. جب صرف اپنی بابت۔۔۔
  171. پھر مجھ پر بوجھ۔۔۔
  172. کیسے دن ہیں۔۔۔
  173. ان کو جینے کی مہلت۔۔۔
  174. جن لفظوں میں۔۔۔
  175. میں عمر اپنے لیے بھی تو کچھ بچا رکھتا
  176. صبح ہوئی ہے۔۔۔
  177. میرے دل میں ۔۔۔
  178. مطلب تو ہے وہی ۔۔۔
  179. کچھ دن پہلے۔۔۔
  180. یہ ایک صبح تو ہے سیرِ بوستاں کے لیے
  181. ہر جانب ہیں۔۔۔
  182. کیا قیمت۔۔۔
  183. اے ری صبح۔۔۔
  184. اے دل اب تو۔۔۔
  185. اور ہمارے وجود۔۔۔
  186. اک یہ ملک، اور رزق اور گیت اور خوشیاں
  187. خود ہی لڑے بھنور سے! کیوں زحمت کی؟ ہم جو بیٹھے تھے
  188. خرید لوں میں یہ نقلی دوا، جو تو چاہے
  189. صحّت کا ایک پہلو مریضانہ چاہیے
  190. دور ایک بانسری پہ یہ دھن: ’پھر کب آؤ گے؟‘
  191. ہے میرے ساتھ تو اب ختم قرنِ آخر بھی
  192. یہ دن، یہ تیرے شگفتہ دنوں کا آخری دن
  193. سنا ہے میں نے
  194. اپنے طغیان کی سزا یہ خیال

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s